1

پانامہ لیکس کیس… ’’آپ اپنے کیس کی طرف توجہ دیں صاحب، خوشامد نہ کریں ‘‘ سپریم کورٹ کے جج نے یہ بات کس وکیل کو اور کیوں کہی؟

پانامہ لیکس کیس… ’’آپ اپنے کیس کی طرف توجہ دیں صاحب، خوشامد نہ کریں ‘‘ سپریم کورٹ کے جج نے یہ بات کس وکیل کو اور کیوں کہی؟

اسلام آباد (پرائم نیوز) پانامہ لیکس کے مقدمے کی سماعت کے دوران پی ٹی آئی کے وکیل نعیم بخاری کا جسٹس عظمت سعید سے دلچسپ مکالمہ ہوا. نعیم بخاری نے کہا کہ آج آپ مجھ پر غصہ کریں گے جس پر جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ آپ اپنے کیس کی طرف توجہ دیں بخاری صاحب، خوشامد نہ کریں. چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے پانچ رکنی بینچ پانامہ لیکس کیس کی سماعت ہوئی، نعیم بخاری نے سماعت شروع ہوتے ہی کہا کہ پچھلی سماعت پر ہونے والی تلخی پر معذرت خواہ ہوں، اگر میری بلند ہو جائے تو کاروائی کیجئے گا. پانامہ لیکس کیس میں وزیر اعظم نواز شریف کے بچوں کے وکیل اور پی ٹی آئی کے وکیل نے جرح کی اور مختلف ثبوتوں پر دلائل پیش کئے.

دوسری طرف پی ٹی آئی کے رہنما شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ پارلیمنٹ میں واپسی کا فیصلہ پانامہ لیکس کے فیصلے کے بعد کیا جائے گا. سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ وکیل بابر اعوان سے کافی حد تک مطمئن ہوں، پارلیمنٹ میں واپسی کا فیصلہ پانامہ لیکس کیس کے فیصلے کے بعد کریں‌ گے جبکہ 24ویں آئینی ترمیم کو ہم نے مسترد کر دیا ہے. بلاول بھٹو سے متعلق انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹو کے خلاف کوشش کرنے کا پورا حق ہے، بلاول ایک سیاسی جماعت کے سربراہ ہیں، ہر جماعت کو حق ہے کہ وہ جستجو کرے جبکہ بلاول کو کس سے آزادی حاصل کرنا ہو گی بعد میں بتاؤں‌ گا.

اپنا تبصرہ بھیجیں