1

بندر کی لڑکیوں کے ساتھ شرارت کرنا بہت مینگا پڑ گیا، 20 افراد جان کی باری ہار گئے

بندر کی لڑکیوں کے ساتھ شرارت کرنا بہت مینگا پڑ گیا، 20 افراد جان کی باری ہار گئے

اسلام آباد ( پرائم نیوز) لیبیا میں بندر کے وجہ سے شروع ہونے والے مسلح تصادم میں 20 افراد جاں بحق جبکہ 50 زخمی ہو گئے ہیں. غیر ملکی میڈیا کے مطابق لیبیا میں ایک بندر کے حملے کی وجہ سے 2 قبائل کے درمیان مسلح تصادم کے باعث کم از کم 20 افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے. اطلاعات کے مطابق یہ واقعہ جنوبی لیبیا کے شہر سبھا میں پیش آیا جہاں قدافیہ نامی قبیلے کے ایک دکاندار کے پالتو بندر نے اولاد سلیمان قبیلے سے تعلق رکھنے والی سکول کی طالبات پر حملہ کر دیا.

اس واقعے کے بعد قذافیہ قبائل کے افراد نے بندر کے مالک پر حملہ کر دیا. جس سے اولاد سلیمان اور قذافیہ قبیلے کے درمیان جھڑپوں کا سلسلہ شروع ہو گیا اور یہ کئی دن تک جاری رکھا. جھڑپوں میں‌مارٹر سمیت بھاری ہتھیاروں کا استعمال کیا گیا اور اس میں 50 افراد زخمی بھی ہوئے.

اس واقعہ میں ہلاکتوں کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کیونکہ سلیمان قبائل کے ہلاک ہونے والے افراد کی ہی اطلاعات اب تک سامنے آئی ہیں. اطلاعات کے مطابق بندر نے ایک لڑکی کا حجاب کھینچ لیا اور اسے نوچا اور کاٹا بھی تھا. دونوں قبائل کے درمیان پہلے ہی سے کئی سالوں سے کشیدگی جاری تھی. لیبیا کے جنوبی علاقے میں واقع شہر سبھا راکین قطن اور ہتھیاروں کی سمگلنگ کا گڑھ سمجھا جاتا ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں