1

’’بھارت میں قیامت ٹوٹ پڑی‘‘ اتنے بڑے پیمانے میں ہلاکتیں اور ہر طرف چیخ و پکار

’’بھارت میں قیامت ٹوٹ پڑی‘‘ اتنے بڑے پیمانے میں ہلاکتیں اور ہر طرف چیخ و پکار

نئی دہلی ( پرائم نیوز) بھارتی ریاست اتر دیش میں ٹرین کی ایک درجن سے زائد بوگیاں پٹٹری سے اترنے سے 100 افراد ہلاک اور 200 سے زائد زخمی ہو گئے، بیشترزخمیوں کی حالت تشویشناک ہونے کی وجہ سے ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے. وزیر اعظم نریندر مودی نے حادثے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے متاثرہ خاندانوں کے ساتھ تعزیت کیا ہے جبکہ وزیر ریلوے نے کہا ہے کہ حادثے کی انکوائری کا حکم دے دیا گیا، حادثے کے متاثرین کی مالی معاونت کی جائے گی اور ٹرین حادثے کے ذمہ داروں کے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی.

اتوار کو بھارتی میڈیا کے مطابق پٹنہ اندور ایکسپریس کی 14 بوگیاں ریاست اتر پردیش کے شہر کانپورسے 100 کلو میٹر دور پور کھیاں میں پٹٹری سے اتر گئیں جس کے نتیجے میں 100 افراد جان کی بازی ہار گئے جبکہ 200 سے زائد زخمی بھی ہوئے. واقعہ رات 3 بجے کے قریب پیش آیا جب زیادہ تر مسافر سو رہے تھے. امدادی ٹیموں کے اہلکاروں نے حادثے میں زخمی ہونے والوں کو مختلف اسپتالوں میں منتقل کیا جہاں انہیں طبی امداد دی جا رہی ہے جبک متعدد افراد کی حالت تشویشناک ہونے کی وجہ سے ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے.

بھارتی ریلوے حکام کے مطابق زیادہ تر ہلاکتیں ٹرین کی 2 کوچز میں ہوئیں جبکہ مسافروں کو ان کی منزل پر روانہ کرنے کیلئے متبادل گاڑی کا انتظام کیا جا رہا ہے. بھارتی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے ٹرین حادثے کے بعد نیشنل ڈیزاسٹر رپسانس فورس کو فوری طور پر جائے وقوع پر پہنچانے کا حکم دے دیا ہے. بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے سوشل میڈیا پر اپنی ٹویٹ میں حادثے میں انسانی جانوں کے ضیاع پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ انھوں نے وزیر ریلوے سوریش پر ہبو سے بات کی ہے جو موجودہ حالات کی نگرانی خود کر رہے ہیں. دوسری طرف بھارتی وزیر ریلوے سریش پر ہبونے بھی اپنے ٹویٹ میں کہا کہ حادثے کی انکوائری کا حکم دے دیا گیا ہے جبکہ حادثے کے متاثرین کی مالی امداد کی جائے گی. انہوں نے کہا کہ ٹرین حادثے کے ذمہ داروں کے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی. حادثے کا شکار ہونے والی ٹرین پر سفر کرنے والے ایک مسافر نے بتایا کہ رات کے 3 بجے کے قریب ہمیں زور دار جھٹکا لگا. کئی بوگیاں پٹٹری سے اتر گئیں. ہر ایک صدمے میں‌تھا، میں نے خود لاشیں اور زخمی دیکھے. کانپور سٹیشن ریلوے کے اہم جنکشنز میں سے ایک ہے اور یہاں سے ہر روز سینکڑوں ٹرینیں گزرتی ہیں. ریلوے ترجمان انیل سکسینا کا کہنا ہے کہ کانپور سے گزرنے والی دوسری ٹرینوں کا رخ موڑ دیا گیا ہے. بھارت میں ریلوے کا نظام پرانا ہونے کی وجہ سے ٹرین کے حادثے معمول کی بات ہے. ایک اندازے کے مطابق بھارت میں ایک دن میں 2 کروڑ 30 لاکھ افراد ٹرین کے ذریعے سفر کرتے ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں