1

دنیا سے پردہ فرماتے وقت آپﷺ نے کونسی 2 باتیں ارشاد فرمائیں؟ مولانا طارق جمیل کا ایمان افروز بیان

دنیا سے پردہ فرماتے وقت آپﷺ نے کونسی 2 باتیں ارشاد فرمائیں؟ مولانا طارق جمیل کا ایمان افروز بیان

اسلام آباد ( پرائم نیوز) معروف مذہبی سکالر مولانا طارق جمیل نے وکلاء کے ایک اجتماع سے بیان کرتے ہوئے کہا کہ آپﷺ جب دنیا سے پردہ فرمانے لگے تو اس وقت بھی آپﷺ کو اپنی کا خیال تھا، آپﷺ نے حضرت جبرائیل علیہ السلام سے سوال کیا کہ اللہ تعالیٰ میرے بعد میری امت سے کیا سلوک کریں گے؟ حضرت جبرائیل علیہ السلام عرش پر گئے اور واپس آئے تو فرمایا کہ ’’اللہ تعالیٰ فرماتا ہے کہ میں آپﷺ کے بعد آپﷺ کی امت کو تنہا نہیں چھوڑوں گا، ان کا ساتھ دوں‌ گا‘‘. اس دوران موت کے فرشتے حضرت عزرائیل علیہ السلام آپﷺ کے پاس کھڑے رہے. حضرت جبرائیل علیہ السلام کی بات سن کر آپﷺ نے فرمایا کہ اب میری آنکھیں ٹھنڈی ہو گئی ہیں، یا اللہ اب مجھے اپنے پاس بلا لے.

مولانا طارق جمیل کا کہنا ہے کہ آپﷺ نے پردہ فرمانے سے پہلے دو باتیں ارشاد فرمائیں کہ ’’اے میری امت نماز مت چھوڑنا اور نوکروں (غریبوں) پر رحم کرنا‘‘. صحابہ کرام علیہم رضوان نے جب آپﷺ سے پوچھا کہ آپﷺ جنت میں کہاں کھڑے ہوں گے تو آپﷺ نے فرمایا کہ میں جنت الفردوس میں غریبوں کے ساتھ کھڑا ہوں گا. دنیا سے پردہ فرماتے وقت آپﷺ ’’الصلوۃ، الصلوۃ، الصلوۃ‘‘ یعنی نماز، نماز، نماز کہتے ہوئے پردہ فرما گئے.

اپنا تبصرہ بھیجیں