1

انسانیت کا سر شرم سے جھک گیا… کشمیری مسلسل کتنے ہفتوں‌سے نماز جمعہ سے محروم رہے؟ آج بھی کشمیریوں کو نماز سے روکنے کیلئے کیا اقدامات کیے گئے؟

انسانیت کا سر شرم سے جھک گیا… کشمیری مسلسل کتنے ہفتوں‌سے نماز جمعہ سے محروم رہے؟ آج بھی کشمیریوں کو نماز سے روکنے کیلئے کیا اقدامات کیے گئے؟

سری نگر ( پرائم نیوز) مقبوضہ کشمیر میں حالات بدستور کشیدہ ہیں، بھارت کی ریاستی دہشت گردی کے خلاف آج یوم استقلال منایا جا رہا ہے، کشمیریوں کو مسلسل اٹھارویں ہفتے نماز جمعہ سے محروم رکھنے کیلئے کرفیو نافذ کر دیا گیا ہے. مقبوضہ کشمیر کے عوام بھارت کے غاصبانہ تسلط اور ظلم کے سامنے ہار ماننے کو تیار نہیں ہیں، بھارت کی ریاستی دہشتگردی کے خلاف آج یوم استقلال منایا جا رہا ہے. سری نگر میں جامع مسجد تک آزادی مارچ کیا جائے گا. کٹھ پتلی انتظامیہ نے کشمیریوں کو احتجاج سے روکنے کیلئے سری نگر میں کرفیونافذ کر دیاہے.

بھارتی فورسز کی طرف سے سرچ آپریشن کے بہانے چادر اور چار دیواری کا تقدس پامال کیا جا رہا ہے. مقبوضہ کشمیر کی بھارت نواز کٹھ پتلی انتظامیہ نے آزادی مارچ میں شرکت پر درجنوں سرکاری ملازمین کو برطرف کر دیا ہے. کٹھ پتلی انتظامیہ نے کشمیریوں کو احتجاج سے روکنے کیلئے غیر اعلانیہ کرفیو لگا دیا ہے، گھر گھر چھاپے مار کر نوجوانوں کو گرفتار کیا جا رہا ہے. مقبوضہ وادی میں نامعلوم افراد کی طرف سے اسکولوں کو آگ لگائی جا رہی ہے. پچھلے دنوں حریت رہنما یاسین ملک کو گرفتار اور میرا وعظ عمر فاروق کو گھر میں نظر بند کر دیا گیا ہے. سید علی گیلانی نے یاسین ملک کی گرفتاری اور میرا وعظ کی نظر بندی کی شدید مذمت کی ہے، بھارتی فورسز نے ظلم و ستم کے خلاف حریت کانفرنس کی اپیل پر 17 نومبر تک احتجاج کیا جائے گا.

خیال رہے کہ حریت رہنماء برہان وانی کی شہادت کے بعد کشمیر میں ہزاروں افراد نے بھارتی تسلط کے خلاف احتجاج شروع کیا تھا اور مسلسل 18 ہفتوں میں بھارتی فوج نے 100 زائد کشمیریوں کو شہید کر دیا ہے جبکہ ہزاروں زخمی اور اپنی بینائی سے محروم ہو چکے ہیں اور 9 ہزار سے زائد کشمیریوں کو گرفتار کیا جا چکا ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں