22

2 اہم شخصیات کیلئے صرف سات دن کی مہلت؟

دواہم شخصیات کیلئے صرف سات دن کی مہلت؟

اسلام آباد (پرائم نیوز) سپریم کورٹ نے مسلم لیگ ن کے رہنما حنیف عباسی کی درخواست پر عمران خان اور جہانگیر ترین کو جواب طلبی کے نوٹس جاری کر دیئے. چیف جسٹس کا کنہا تھا کہ دوسرے فریق کو سن کر فیصلہ کیا جائے گا کہ آگے کیا کرنا ہے.جبکہ عدالت نے درخواست گزار کی پانامہ لیکس کیس کے ساتھ سماعت کی استدعا کو مسترد کردیا ہے.

بروز پیر چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے عمران خان اور جہانگیر ترین کے خلاف پانامہ لیکس کی تحقیقات کے لیے درخواست پر سماعت کی گئی.حنیف عباسی کے وکیل اکرم شیخ کا دلائل میں کہنا ہے کہ پانامہ لیکس میں چیئر مین تحریک انصاف عمران خان اور جہانگیر ترین کے نام بھی آئے ان کا کہنا تھا کہ تحریک جماعت غیر ملکی فنڈ لینے والی جماعت ہے.

میری درخواست کی پانامہ لیکس کے ساتھ اس کیس کی بھی سماعت لازمی کی جائے جس پر چیف جسٹس کا کنہا تھا کہ ہم درخواست پر پہلے ہی آرڈر لکھوا چکے ہیں اگر آپ مزید 2 گھنٹے بولنا چاہتے ہیں تو الگ بات ہے. جبکہ عدالت نے درخواست کو پانامہ لیکس کی درخواستوں کے ساتھ اکٹھا کرنے کی استدعا کو مسترد کردیا ہے.ان کا کہنا تھا کہ اب دوسری پارٹی کو سن کر فیصلہ کریں گے کہ کیا کرنا ہے.جبکہ عمران خان اور جہانگیر ترین سے 15 نومبر تک جواب طلب کر لیا گیا.

اپنا تبصرہ بھیجیں