art

لاڑکانہ میں ایڈز پھیلنے کی حیران کن وجہ سامنے آگئی،ہلاک ہونے والوں کی تعداد میں اضافہ،سینکڑوں مریض سامنے آگئے

لاڑکانہ میں ایڈز پھیلنے کی حیران کن وجہ سامنے آگئی،ہلاک ہونے والوں کی تعداد میں اضافہ،سینکڑوں مریض سامنے آگئے

لا ڑکانہ (پرائم نیوز) لاڑکانہ میں ایچ آئی ای میں مبتلا ایک ایک مریض چانڈکا اسپتال میں فوت ہوگیا.اس سال میں ایچ آئی ای میں مبتلا جاں بحق ہونے والے مریضوں کی تعداد 13 ہوگئی .ایچ آئی وی کے پھیلاوّ کو وجہ قرار دینے والے غیر قانونی بلڈ بینکس اور لیبارٹریز کے خلاف کاروائی موّثر نہ بنائی جا سکی .جبکہ ضلعی انتظامیہ نے ڈاکٹروں کے خلاف کریک ڈاوّن کرتے ہوئے 40 کلینکس کع سیل کردیا. رپورٹ کے مطابق لاڑکانہ کے اسپتال میں ایچ آئی وی میں مبتلا 30 سالہ مریض دم توڑ گیا، جاں بحق ہونے والے مریض کو پچھلے شب اسپتال میں بہت سیریس حالت میں داخل کروا دیا تھا .اس واقعے کے بعد مریض کی لاش کو شہداد کورٹ کی تحصیل وارہ میں منتقل کردیا جبکہا س سال میں ایچ آئی ای میں مبتلا جاں بحق ہونے والے مریضوں کی تعداد 13 ہوگئی.اور عام طور پر اس وقت ایچ آئی وی میں مبتلا مریضوں کی تعداد 114 ہوگئی جو کہ اس بیماری کی وجہ سے دم توڑ گئے ہیں.

دوسری طرف محکمہ صحت کی طرف سے ایچ آئی وی کے پھیلاوّ میں غیر قانونی لیبار ٹریز ،بلڈ بینکس اور اتائی ڈاکٹرز کی کلینکس کو زمہ دار قرار دے دیا.اس کے بعد صرف 3 غیر قانونی بلڈ بینکس اور لیبارٹریز کو سیل کر دیا تھا .جبکہ مزئد کاروائی فی ا لحال روک دی گئیجس کے بعد تا حال موّثر کروائی نہ ہوسکی جبکہ دوسری جانب اتائی ڈاکٹروں کے خلاف کریک ڈاوّن کرتی ہوئے پورے ضلع میں 40 کلینکس سیل کر دیے.

اپنا تبصرہ بھیجیں