1

سپریم کورٹ سے بڑی خبر.. ’’ آپ اس عہدے کے اہل نہیں‘‘ عمران خان کو نئی خوشخبری مل گئی

سپریم کورٹ سے بڑی خبر.. ’’ آپ اس عہدے کے اہل نہیں‘‘ عمران خان کو نئی خوشخبری مل گئی

اسلام آباد ( پرائم نیوز) سپریم کورٹ نے نیب میں غیر قانونی بھرتیوں کے خلاف چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے از نوٹس کیس کی سماعت کی. پر اسکیوٹر نیب نے عدالت کو بتایا کہ ہمارے وکیل نےکل لاہور سے آنا تھا لیکن وہ موٹروے بندش کے باعث نہ آ سکے لہٰذا سماعت ملتوی کر دی جائے جس پر چیف جسٹس انور ظہیر جمالی نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ انہیں موٹروے پر آںے کی ضرورت ہی کیا تھا وکیل ہوائی جہاز پر بھی آ سکتے ہیں اس موقع پر جسٹس امیر ہانی مسلم کا کہنا ہے کہ نیب کی رپورٹ میں بھرتیوں کے بارے میں حقائق مخفی رکھے گئے ہیں ایک ڈی جی بین حسنین احمد کے کورٹ مارشل ہونے کے باوجود اعلیٰ عہدے پر کام کر رہے ہیں اس حوالے سے عدالت کو آگاہ نہیں کیا گیا.

چیف جسٹس کا اپنے ریمارکس میں کہنا ہے کہ آج کل یہ رواج عام ہو چکا ہے کہ ایک ساتھ کورٹ مارشل ہونے کے باوجود کئی عہدوں پر برا جمان رہے ہیں. جسٹس امیر ہانی مسلم کا کہنا ہے کہ کورٹ مارشل یافتہ شخص کسی سرکاری عہدے کا اہل نہیں ہے. نیب کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ریکارڈ کے مطابق ڈی جی نیب حسنین کو کسی سرکاری ملازمت کیلئے نااہل قرار نہیں دیا گیا، جسٹس امیر ہانی مسلم نے کہا ہے کہ نیب نے کنٹریکٹ ملازمین کی تفصیلات مہیا نہیں کی، عدالت نے نیب کے وکیل کی عدم حاضری پر کیس کی سماعت 2 ہفتوں کیلئے ملتوی کر دی ہے.

خیال رہے کہ پی ٹی آئی کے چیئر مین عمران خان نیب اور کرپشن سے متعلق بارہا آواز بلند کرتے رہے ہیں اور عمران خان نے اس ضمن میں کہا ہے کہ نیب کرپٹ ہونے کے باعث پانامہ لیکس کی انکوائری سے انکار کر رہا ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں