1

آئی پیڈ کا استعمال حرام ہے… سعودی علماء نے بڑا اعلان کر دیا، حلال اور حرام کا چکر کیا ہے؟ سب واضح ہو گیا

آئی پیڈ کا استعمال حرام ہے… سعودی علماء نے بڑا اعلان کر دیا، حلال اور حرام کا چکر کیا ہے؟ سب واضح ہو گیا

مکہ مکرمہ (پرائم نیوز) سعودی عرب میں‌ آئمہ مساجد اور خطباء اپنے جمعے کے خطبات کے وقت جدید ٹیکنالوجی سے فائدہ اٹھا رہے ہیں اور ان میں بعض جمعہ کا خطبہ پڑھنے کیلئے اسمارٹ ڈیوائسز آئی پیڈزوغیرہ کا استعمال کر رہے ہیں. بعض مذہبی اسکالروں نے اس رجحان پر اپنی نا پسندیدگی کا اظہار کیا ہے اور ان کا موقف ہے کہ آئمہ اور خطباء کو خطبہ دیتے وقت آئی پیڈ کا سہارا نہیں لینا چاہیئے اور اس کی بجائے وہ کاغذ پر خطبہ لکھ کر پڑھ سکتے ہیں، تاہم مذہبی اسکالرز اب حکومتی فیصلے کے انتظار میں ہیں کہ آیا اس پر حکومت پابندی عائد کرتی ہے کہ نہیں.

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق نجران میں‌ اُم ابراہیم الفارس مسجد کے امام شیخ‌ خالد الفارس نے کہا ہے کہ جمعہ کا خطبہ دیتے وقت کاغذ کی بجائے برقی آلات ( ڈیوائسز) کا استعمال مناسب نہیں ہے اور اس کی تائید نہیں کی جا سکتی. انہوں نے اس حوالے سے یہ نکتہ بیان کی ہے کہ عبادت گزار مساجد میں روحانی بالیدگی اور ترقی کیلئے آتے ہیں، اس لیے ان کے احساسات کا احترام کرنا چاہیئے.امام کا ایک آئی پیڈ کو دیکھ کر خطبہ پڑھنا بے تقریری کی علامت ہے. مسجد الزبیرین العوام شیخ سعید الجلیل نے کہا ہے کہ ایک امام کی سب سے بڑی خاصیت اور صلاحیت اپنے خطبات کے ذریعے عبادت گزاروں کے قلوب و اذہان پر اثر انداز ہونا ہے اور ان خطبات کا سامعین پر اثر ہونا چاہیئے.

ان کا مزید کہنا ہے کہ امام کیلئے سچ کا لمحہ ہوتا ہے جب وہ ممبر پر کھڑا ہوتا ہے. ایک امام کی آواز زیر و بم جتنا قدرتی ہوگا، اس کے اثرات بھی اسی اعتبار سے زیادہ مضوط ہوں گے. کاغز پر لکھے خطبے کو پڑھنا تو ٹھیک ہے لیکن ٹیکنالوجی کو مسجد میں لانے سے گڑ بڑ پیدا ہو سکتی ہے لیکن نجران میں اسلامی امور کے‌ڈائریکٹر شیخ احمد طالبی آئی پیڈز استعمال کرنے کے حق میں ہیں. انہوں نے کہا ہے کہ وزارت نے آئمہ کو خطبات دیتے ہوئے آئی پیڈز کے استعمال کی اجازت دی ہوئی ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں