1

بھکاریوں کو بھیک دینے سے پہلے اس خبر کو ضرور پڑھ لیں، اہم انکشافات سامنے آ گئے

بھکاریوں کو بھیک دینے سے پہلے اس خبر کو ضرور پڑھ لیں، اہم انکشافات سامنے آ گئے

مظفر آباد ( پرائم نیوز) دارلحکومت مظفر آباد میں بھیک مانگنے کے مختلف طریقے جدید دور کی طرح دیکھنے کو ملے ہیں. بھکارکیوں نے مختلف گروپ تشکیل دے کر بھیک مانگنے کے مقصد کیلئے مختلف جرائم میں ملوث ہونے کا انکشاف ہوا ہے، اس میں مشکوک بھکاری بھی شامل ہیں جو سڑکوں پر لیٹ کر اور کرالنگ کر کے بھیک مانگنے کی پریکٹس کر رہے ہیں‌ دراصل یہ جسمانی طور پر مکمل فٹ ہیں اور ان بھکاریوں نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کو دھوکہ دے کر اپنا الو سیدھا کر رہے ہیں. مظفر آباد شہر میں ہر دس منٹ میں‌ تین بھکاری ایک دکان پر حاضری دیتے ہیں.

تفصیلات کے مطابق آزاد کشمیر کا دارلحکومت مظر آباد جس میں بھکاریوں کی تعداد سینکڑوں سے بھی تجاوز کر گئی ہے. یہ بھیکاری خیبرپختونخواہ، افغانستان، کوئٹہ، بلوچستان اور سندھ کے علاقوں سے آتے ہیں مظفر آباد کے مختلف ہوٹلوں اور رہائشی کالونیوں میں رہائش اختیار کر کے روپ بدل کر یہ لوگ بھیک مانگتے ہیں جبکہ ان میں ایسے بھیکاری بھی ہیں جو کہ اپنے آپ کو معذور اور بے کس ظاہر کر کے بھیک مانگتے ہیں اور ان کی بھیک مانگنے کی جگہ بھی مختصر اور وہ مقامات ہیں جہاں مختلف علاقوں سے آنے والے لوگوں کی ریل سیل زیادہ ہوتی ہے جیسا کہ بینک روڈ، اولڈ سیکرٹریٹ میں ان کو دیکھا جا سکتا ہے. ان بھکاریوں نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کی آنکھوں میں دھول جھونک کرپتہ نہیں کیا مقاصد حاصل کرنا چاہتے ہیں یا پھر کسی ملک کے ایجنٹ ہیں ان لوگوں کا طریقہ کار بھیک مانگنے کا سڑکوں پر لیٹ کر جانا یا ایک جگہ پر بیٹھ کر ان کے جسم کے تمام اعضاء مکمل اور مضبوط ہونے کے باوجود اپنے آپ کو معذور بنانے کی سرتوڑ کوشش کرتے ہیں یہ سلسلہ پچھلے زلزلے کے فوری بعد شروع ہوا جو دس سال تک لگاتار چلتا آ رہا ہے مگر آج تک قانون نافذ کرنے والے ادارے یا ضلعی انتظامیہ نے ان سے نہیں پوچھا کہ یہ بھکاری ہیں، جرائم پیشہ افراد ہیں یا پھر کسی ملک کے اہلکار ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں