1

نجی ٹی وی کی خاتون اینکر کو تھپڑ مارنے کا معاملہ! مقدمہ بھی درج کر لیا گیا

نجی ٹی وی کی خاتون اینکر کو تھپڑ مارنے کا معاملہ! مقدمہ بھی درج کر لیا گیا

کراچی ( پرائم نیوز) وزیراعلیٰ سندھ کی معاون خصوصی برائے محکمہ ترقی نسواں ارم خالد نے نجی نیوز چینل کی اینکر کو ایف سی اہلکار کی طرف سے تھپڑ مارنے کے واقعہ کا سخت نوٹس لیتے ہوئے اینکر صائمہ کنول سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا اور متعلقہ اداروں کو واقعہ کی مکمل کاروائی کے بعد رپورٹ جمع کروانے کا حکم دیا ہے. ارم خالد کا کہنا ہے کہ معاملہ کتنا ہی سنگین کیوں نہ ہو کسی کو بھی عورت پر تشدد کی اجازت نہیں. مکمل تحقیق کے بعد ہی معاملہ کی اصل حقیقت سامنے آ سکے گی. ارم خالد نے محکمہ ترقی نسواں سندھ کی طرف سے اینکر صائمہ کنول کو ہرممکن قانونی مدد فراہم کرنے کی یقین دہانی بھی کروا ئی ہے.

خیال رہے کہ اس سے پہلے خاتون اینکرکو تھپٹر مارنے پر لیاقت آباد نادرا آفس کے سکیورٹی گارڈ کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے. تفصیلات کے مطابق نادرا معاملے اور سکیورٹی گارڈ نے لیاقت آباد نادرا آفس میں کوریج کے دوران نجی چینل کی خاتون صحافی کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایا جبکہ سکیورٹی گارڈ نے لوگوں کو منتشر کرنے کیلئے ہوائی فائرنگ بھی کی. پولیس کا کہنا ہے کہ لیاقت آباد نمبر 4 میں واقع نادرا آفس میں پچھلے دنوں نجی ٹی وی چینل کی خاتون اینکر جب شہریوں سے نادرا آفس میں پیش آنے والے مسائل کے بارے میں پوچھ رہی تھی تو وہاں موجود سکیورٹی گارڈ نے ان کو بد ترین تشدد کا نشانہ بنایا اور دھکے دیتے ہوئے ہراساں کرنے کی کوشش کی. پولیس حکام نے واقعہ کی سی سی ٹی وی فوٹیج دیکھنے کے بعد واقعہ کا مقدمہ نادرا آفس کے گارڈ حسن عباس کے خلاف تھانہ گلبہار میں درج کر لیا ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں