5

جمعہ کے روز یہ کیا خبر آ گئی؟ امام مسجد اور شاگرد توہین مذہب کے الزام میں گرفتار، دونوں نے ایسا کیا، کیا؟

جمعہ کے روز یہ کیا خبر آ گئی؟ امام مسجد اور شاگرد توہین مذہب کے الزام میں گرفتار، دونوں نے ایسا کیا، کیا؟

اسلام آباد ( پرائم نیوز) مذہب کے الزام میں ایک امام اور اس کے شاگرد کو گرفتار کر لیا گیا ہے. تفصیلات کے مطابق کوٹ رادھا کشن میں مرلی اتار گاؤں کے محمد امتیاز کی مدعیت میں پولیس کی طرف سے درج کیے گئے مقدمے میں بتایا گیا ہے کہ اس نے ایک گلی میں 17 سالہ نوجوان کو قرآن کے اوراق جلاتے ہوئے دیکھا ہے. ایف آئی آر میں کہا گیا ہے کہ محمد امتیاز نے اس نوجوان کو اس کی حرکت پر سمجھانے کی کوشش کی تو اس نوجوان نے زرود دیا کہ قرآن کے شہید اوراق کو تلف کرنے کا طریقہ یہ ہے کہ ان کو جلانے کے بعد زمین میں دفن کر دیا جائے. مقدمے میں بتایا گیا ہے کہ اس نوجوان نے اپنے موقف کی تائید کیلئے مقامی مسجد کے امام کوبھی بلایا جو کہ اس نوجوان کا استاد بھی تھا. امام مسجد نے نوجوان کے عمل کو درست قرار دیا جبکہ مبینہ طور پر اس دعوے کی صداقت کیلئے حدیث بھی پیش کی. مقدمے کے مدعی نے جب یہ معاملہ اپنے نام نہاد پیر کو سنایا تو اس پیر نے پولیس کو مطلع کرنے کی ہدایت کی. ان معلومات کی بنیاد پر پولیس اس مقام پر پہنچی جس کے بارے میں انہیں آگاہ کیا گیا جبکہ اس امام مسجد اور نوجوان کو گرفتار کر لیا گیا ہے. پولیس نے دونوں کے خلاف توہین مذہب کی آئینی شق 295- بی اور پاکستان پینل کوڈ کے تحت مقدمہ درج کیا ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں