1

نئے فتنے نے سر اٹھا لیا، کینیا اور تیونس کے بعد پاکستان میں بھی مصنوعی خانہ کعبہ تعمیر

نئے فتنے نے سر اٹھا لیا، کینیا اور تیونس کے بعد پاکستان میں بھی مصنوعی خانہ کعبہ تعمیر

اسلام آباد ( پرائم نیوز) پاکستان کے صوبے بلوچستان مین زکری فرقہ کے بارے میں مصنوعی خانہ کعبہ بنانے کی خبر موصول ہوئی ہے جہاں زکری لوگ اپنے تعمیر کردہ خانہ کعبہ کے گرد طواف کرتے ہیں اور حج کے پورے مناسک ادا کر کے اس بات کا دعویٰ کرتے ہیں کہ حج کی ادائیگی کیلئے سعودی عرب جانے کی ضرورت نہیں.

نجی اخبارکی خبروں کے مطابق زکری قبیلے کے مذہبی قائد کے بارے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ان کا عقیدہ یہ ہے کہ ان کے درمیان امام مہدی آ چکے ہیں تاہم اب وہ وفات پا چکے ہیں. بعض علماء کے مطابق امام مہدی جب آئیں گے تو پھر انکے انتقال کی خبریں غلط ہوں گی. علماء کی مجموعی طور پر زکری قبیلے میں ہونے والے حج عمرے اور طواف کو ناجائز اور کفر تعمیر کرتے ہیں. اس نقلی خانہ کعبہ کی اطلاعات کے بعد لوگ شدید غصے سے آگ بگولہ ہو گئے تاہم بعض لوگوں نے کہا ہے کہ یہ مصنوعی خانہ کعبہ لوگوں کو مناسک حج سکھانے کیلئے استعمال میں لایا جاتا ہے.

خیال رہے کہ اس سے پہلے کینیا اور تیونس میں جعلی خانہ کعبہ بنانے کی خبریں گردش کر رہی تھیں. سوشل میڈیا پر اس کی ویڈیو اور تصاویر بھی وائرل ہو چکی ہیں جن میں صاف دیکھا جا سکتا ہے کہ لوگ اس کے گرد طواف کرتے ہیں. ذرائع کا کہنا ہے کہ خانہ کعبہ عوام کی تربیت کیلئے بنایا گیا ہے تاکہ انہیں دوران طواف کسی مشکل کا سامنا نہ کرنا پڑے. تاہم روزنامہ خبروں کے مطابق اگرچہ یہ تربیت کیلئے ہے تاکہ حج اور عمرے پر جانے والے افراد یہاں پر عملی تربیت حاصل کر سکیں لیکن تیونس میں ایک ایسا نیا طبقہ بھی پیدا ہوا ہے جس کے خیال میں بلڈ پریشر، شوگر یا دوسری بیماریوں کا شکار لوگ جو سفر کر کے سعودی عرب نہیں جا سکتے وہ یہیں حج و عمرہ کر سکتے ہیں. یہ طبقہ اپنے آپ کو نیو گروپ آف مسلمز کا نام دیتا ہے جبکہ مذہبی سکالرز اور ملکی علماء نے اس نظریہ کو غلط قرار دے دیا ہے ان کا کہنا ہے کہ حج اور عمرہ صرف سعودی عرب میں موجود حقیقی خانہ کعبہ میں جا کر ہی کیا جا سکتا ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں