1

پاکستان سے جنگ کا خوف… بھارتی فوجی گیڈر کی طرح پیٹھ دکھا کر گھروں کو بھاگ نکلے

پاکستان سے جنگ کا خوف… بھارتی فوجی گیڈر کی طرح پیٹھ دکھا کر گھروں کو بھاگ نکلے

لاہور ( پرائم نیوز) بھارتی حکومت اور بھارتی فوج کی طرف سے جنگی جنون کے دعوؤں کے بعد ان کی اپنی فوج اور سرحدی علاقوں میں رہنے والے بھارتیوں کا یہ حال ہے کہ لاہور کے بارڈر ایریا کے ساتھ ساتھ لگنے والے بھارتی دیہاتی علاقے خالی ہو چکے ہیں یہی نہیں بلکہ بی ایس ایف کے اہلکار بھی فرنٹ پر بنی اپنی برجیوں کو خالی کر کے 2،2 کلو میٹر پیچھے مورچوں میں جا چکے ہیں. بھارتی سرحدی علاقے رتن کورڈ، اٹاری، آرزووالی، پل کنجری اور دیگر دیہات نہ صرف خالی ہو چکے ہیں بلکہ جنگ کے خوف سے وہاں کے رہائشی کھڑی فصلوں کو چھوڑ کر محفوظ علاقوں میں جا چکے ہیں.4 دنوں سے ان علاقوں میں نہ کوئی کسان اور نہ کوئی بھارتی فوجی نظر آرہے ہیں. پل کنجری چیک پوسٹ سمیت دیگر برجیوں پر بھی بھارتی فوجی دکھائی نہیں دیتے.

جبکہ دوسری طرف بھارتی سرحد سے 20 فٹ دوری پر پاکستانی کسان بغیر کسی ڈر کے نہ صرف اپنے کام میں مصروف ہیں بلکہ پاکستانی رینجرز کے جوان بھی سخت گرمی میں اپنے مورچوں پر چاک و چوبند کھڑے ہیں. پاکستانی کسانوں کا جذبہ اپنے وطن عزیز کیلئے عروج پر ہے کہ وہ سینوں پر پاکستانی پرچم سجائے فصلوں کی کٹائی کی بجائے ملک کی حفاظت کیلئے تیار کھڑے ہیں، ان کسانوں کا کہنا ہے کہ ہمیں کوئی خوف نہیں ہے اگر بھارتی جنگ کریں تو ہم اپنی فوج کے ساتھ مل کر ان سے لڑیں گے ہم اپنے دیہات کسی قیمت پر خالی نہیں چھوڑ سکتے ہم بزدل نہیں پاکستانی ہیں اور اس سے بڑھ کر مسلمان ہیں ملک کی حفاظت کرنا صرف فوج کا کام ہی نہیں بلکہ ہمارا بھی فرض ہے کہ اپنے وطن کی سرحدوں کی حفاظت کریں. جس دن سے یہ جنگی جنون شروع ہوا ہے ہم بھارت سرحد کے زیادہ قریب ہو کر کام کرتے ہیں‌اور ہر روز یہ دعا مانگتے ہیں‌کہ جنگ شروع ہو تو ہم بھارتیوں کو مزہ چکھا سکیں. کسانوں کا کہنا ہے کہ اگر جنگ ہوئی تو ہم امرتسر جا کر اپنی فصلیں کاشت کریں‌ گے.

خیال رہے کہ اس سے پہلے بڑی تعداد میں بھارتی فوجیوں نے پاکستان سے جنگ کے خوف سے چھٹیوں کی درخواستیں دی تھیں. بھارتیوں کا جنگی جنون تو نظر آتا ہے لیکن بھارتی فوجی پاکستان کا مقابلہ کرتے ہوئے ڈرتے بھی ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں