1

انجیکشن کی سوئی سے ڈرنے والے افراد کیلئے خوشخبری، ماہرین کی نئی شاندار ایجاد

انجیکشن کی سوئی سے ڈرنے والے افراد کیلئے خوشخبری، ماہرین کی نئی شاندار ایجاد

اسلام آباد ( پرائم نیوز) ماہرین کا کہنا ہے کہ سیپیوں (مسل ) میں موجود قدرتی اجزا سے متاثر ہو کر سوئی بنائی گئی ہے. سیپیوں میں پائے جانے والا صدفہ ایک لیس دار مادے کے ساتھ سیپیوں سے جڑا رہتا ہے. یہ ایجاد کیا جانے والا ایسے مریضوں کیلئے موثر ہے جن کے جسم سے بہنے والا خون جلدی رکتا نہیں ہے. علاوہ ازیں ہمو فیلیا، ذیا بیطس اور آخری درجے کے کینسر کے مریض بھی اس سے فائدہ حاصل کر سکتے ہیں جن کو سوئی یا کینولہ لگانے کی صورت میں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے. اسی طرح پلاسٹک سرجری میں بعض اوقات اتنا خون بہتا ہے کہ اسے روکنا مشکل ہو جاتا ہے. یہ مواد ایک جل کی صورت میں کام کرتا ہے جو ’کیٹے کو لکس‘ نامی پالیمرپر مشتمل ہے اور بالکل اسی طرح کام کرتا ہے جس طرح سیپ کا کیڑا ایک چپکنے والے مادے کے ذریعے سیپ سے جڑا رہتا ہے. اسے جنوبی کوریا میں ’ کورین انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی‘ کے ماہرین نے تیار کیا ہے. جب اسے صحت مند اور ہییمو فیلیا کے شکار جانوروں پر آزمایا گیا تو اس نے فوری طور پر سوئی کے زخم کو بھرکر برابر کر دیا. اسی طرح یہ ایک اسٹیکر کی طرح زخم سے جڑ جاتا ہے اور سوراخ کو بند کردیتا ہے. یہ انفیکشن کو روکنے میں بھی کافی مدد گار ثابت ہوتا ہے.

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں