1

سلمان خان کے والد سلیم خان نے نواز شریف کے خلاف ایسا بیان دے دیا کہ کوئی سوچ بھی نہیں سکتا، نیا ہنگامہ برپا ہو گیا

سلمان خان کے والد سلیم خان نے نواز شریف کے خلاف ایسا بیان دے دیا کہ کوئی سوچ بھی نہیں سکتا، نیا ہنگامہ برپا ہو گیا

ممبئی ( پرائم نیوز) بھارتی اداکار سلمان خان کے والد سلیم خان نے ٹوئٹرپروزیراعظم نوازشریف کے خلاف نئی بحث چھیڑدی. سلیم خان نے کہا ہے کہ یہ ایک ایسا وزیراعظم ہے جس کی کوئی نہیں سنتا.بھارتی فلمیں اور اداکار تو پہلے ہی پاکستان دشمنی کیلئے مشہور تھے، مگر اب سلمان خان کے والد سلیم خان بھی بھارتی پروپیگنڈے کے ہم نوا بن گئے ہیں. سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹرپر سلیم خان نے پاکستانی وزیراعظم کی عزت اور احترام کو بالائے طاق رکھتے ہوئے غلیظ زبان کا استعمال کیا ہے. سلیم خان نے کہا ہے کہ معذرت کے ساتھ، مگر جن لوگوں نے آپ کا نام رکھا اگرانکو مستقبل اور آپ کے کردار کا اندازہ ہوتا تو وہ کبھی بھی آپ کا نام نواز شریف نہیں بلکہ بے نواز شریر رکھتے.

اپنی ٹوئٹ میں سلیم خان کا کہنا ہے کہ نواز شریف آپ کی تو یہ اوقات ہے کہ خود آپ کے ملک میں آپ کی کوئی نہیں سنتا، نہ آپ کے لوگ، نہ آپ کی آرمی اور نہ آپ کی پارلیمنٹ، ان کا مزید کہنا ہے کہ مجھے تو ڈر ہے کہ واللہ آپ کے گھر والے بھی آپ کی سنتے ہوں گے یا نہیں.تعجب کی بات یہ ہے کہ ایسی صورتحال میں جب کوئی آپ کی بات سننے میں دلچسپی نہیں رکھتا، آپ پوری دنیا میں گھوم کر بھارت کی شکایت کرتے پھر رہے ہیں، کیا آپ کو لگتا ہے کہ کسی نے آپ کی بات توجہ سے سنی ہوگی یا نہیں؟

سلیم خان کی ٹوئٹس اور خیالات سن کر بس زیرلب یہ ہی جملہ آتا ہے کہ شاہ سے زیادہ شاہ کا وفادار، وزیر اعظم نواز شریف کے خلاف ہرزہ سرائی کرنے والا یہ سلیم خان شاید اپنی دو آنکھوں اور کانوں سے مقبوضہ کشمیر میں ہوتے بھارتی ظلم اور بربریت نہ دیکھ اور سن سکتا ہو، مگر ہاں اسے بھارتی پروپیگنڈے اور سازشوں کے تحت اپنے ہی ملک پر کیے گئے حملوں میں اپنی حکومت کی طرح پاکستان کا ہاتھ ہی نظر آتا ہے.

صرف یہ ہی نہیں، ان جیسے بہت ضمیر فروش بالی ووڈ کی دنیا میں پیش پیش رہتے ہیں، جسکی ایک اور مثال بالی ووڈ کنگ شاہ رخ خان ہے، جس نے اڑی واقعہ میں ملوث افراد کو سخت سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے. بھارتی محبت میں چور ایسے ضمیر فروش فنکار شاید سچ اور جھوٹ میں فرق اور وہ وقت بھول گئے، جب اسی بھارت کی سرزمین ان پر تنگ کر دی گئی تھی اور گھروں میں محفوظ نہیں رہے تھے.

اپنا تبصرہ بھیجیں