1

فلم ’’مالک‘‘ پر سے پابندی ہٹانے کا حکم، پابندی کیوں لگائی گئی تھی اور حکم کس نے دیا؟ تفصیلات منظر عام پر

فلم ’’مالک‘‘ پر سے پابندی ہٹانے کا حکم، پابندی کیوں لگائی گئی تھی اور حکم کس نے دیا؟ تفصیلات منظر عام پر

اسلام آباد ( پرائم نیوز) سندھ ہائیکورٹ نے ’’مالک‘‘ کے خلاف پابندی کالعدم قرار دیتے ہوئے فلم کو فوری طور پر ملک بھر میں ریلیز کرنے کا حکم سنا دیا ہے. سندھ ہائیکورٹ میں ’’مالک‘‘ پر سے پابندی ختم کرنے کیلئے ڈائریکٹر عاشر عظیم نے درخواست دائر کی تھی جس میں موقف اختیارکیا گیا تھا کہ فلم میں معاشرے کے حقائق دکھائے گئے ہیں، فلم سینسربورڈ کی اجازت اور تمام قانونی تقاضے پورے کرنے کے بعد ریلیز کی گئی تھی لہذا حکومت کی پابندی غیر قانونی ہے. پچھلی سماعت میں عاشر عظیم کے وکیل فروغ نسیم نے دلائل میں موقف اختیار کیا تھا کہ آئین کی دفعہ 142 اور 144 کے تحت وفاقی مقنتہ کو وفاقی لسٹ میں آنے والے مضامین پر قانون سازی منع ہے.

جبکہ ایڈیشنل اٹارنی جنرل کا دلائل دیتے ہوئے کہنا ہے کہ سندھ میں کچھ سین نکال دیے گئے ہیں مگر پنجاب اور دیگر صوبوں میں قابل اعتراض حصے چلائے گئے لہذا فلم سے قابل اعتراض حصے نکال دیے جائیں تو ہمیں اعتراض نہیں ہو گا. سندھ ہائی کورٹ کے 2 رکنی بینچ نے درخواست سماعت کرتے ہوئے فلم مالک پر پابندی کالعدم قرار دیتے ہوئے فلم کو فوراً ملک بھرمیں ریلیز کرنے کا حکم دے دیا ہے.

خیال رہے کہ فلم مالک کی ریلیز سے پہلے وفاقی فلم سنسر بورڈ کی طرف سے فلم ’’مالک‘‘ کو سرٹیفیکیٹ جاری کیا گیا تھا تاہم فلم کی ریلیز کے بعد فلم ’’مالک‘‘ کی ملک بھر میں نمائش پر پابندی عائد کر دی گئی تھی. فلم پر پابندی کے خلاف لاہور ہائیکورٹ میں بھی درخواستیں دائر ہیں جبکہ پاکستان تحریک انصاف نے بھی فلم پر پابندی کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کیا ہوا ہے.

واضح رہے کہ فلم مالک پر پابندی سے پاکستانیوں میں غم وغصہ کی لہر دوڑ گئی تھی کیونکہ فلم میں کرپٹ حکمرانوں اور کرپشن کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں