4

ہفتےمیں کچھ دن اس کام کو اپنا معمول بنائیں اور پائیں دل کی بیماریوں سے مکمل نجات، ماہرین کی زبردست تحقیق

ہفتےمیں کچھ دن اس کام کو اپنا معمول بنائیں اور پائیں دل کی بیماریوں سے مکمل نجات، ماہرین کی زبردست تحقیق

لاہور ( پرائم نیوز) کہاجاتا ہے کہ نہ صرف اولمپک ایتھلیٹ اور کھلاڑیوں کے دل بڑے ہوتے ہیں بلکہ ا گر ہر ہفتے 3 سے 4 گھٹے ورزش کی جائے تو اس سے بھی دل بڑا ہوتا لیکن اسے دل بڑھنے کی بیماری تصور نہ کیا جائے کیونکہ اسکا معنی دل توانا ہونا ہے.دوڑنے والے کھلاڑیوں کے دل کی باریک رگیں کھلی ہوئی ہوتی ہیں اور ان کا دل معمول سے ذرا بڑا ہوتا ہے. مگر ماہرین کا کہنا ہے کہ کھلاڑی اور ایتھلیٹ کے علاوہ عام افراد بھی اگر ہفتے میں 3 سے 5 گھنٹے ورزش کریں تو ان کا دل بھی افزائش میں بڑھ جاتا ہے.

اس بات کی تصدیق کیلئے امپیریل کالج لندن کے سائنسدانوں نے 1 ہزارسے بھی زائد ایسے افراد کا مطالعہ کیا ہے جن کا دل صحت مند تھا. سروے کے بعد یہ بات پتا چلی ہے کہ جن افراد نے جتنی زیادہ ورزش کی ہے ان کا دل اتنا ہی بڑا ہے. ان میں سے جنہوں نے ہفتے میں 5 گھنٹے تک ورزش کی ان کا دل قدرے بڑا تھا. اس سروے میں شامل ہونے والے 1 ہزار سے زائد افراد میں سے 50 فیصد کا دل بڑا تھا جو ہفتے میں 5 گھنٹے ورزش کرتے تھے. ان میں سے جن افراد نے ہفتے میں 3 گھنٹے جاکنگ اور ورزش کی تھی ان کے دل میں بایاں وینٹریکل 4-2 گنا بڑا تھا جبکہ ہفتے میں 5 گھنٹے تک ورزش کرنے والوں میں یہ شرح 4-4 گنا نوٹ کی گئی ہے. اس کے علاوہ ورزش کا اثر دائیں وینٹریکل پر بھی دیکھنے کو ملا ہے.

ماہرین کا کہنا ہے کہ ورزش کرنے والوں کے دل اور ساخت تبدیلی کو بعض اوقات دل بڑھنے کی ایک عام بیماری تصور کیا جاتا ہے. جس کو اس مطالعے کے ساتھ غلط قرار دے دیا گیا ہے کیونکہ ان کا دل ورزش کی وجہ سے بڑا ہے نہ کہ کسی مرض کے باعث.

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں