8

رات کو دیرتک جاگنے والے افراد یہ خبر ضرور پڑھ لیں، ماہرین نے خطرناک انکشاف کر دیا

رات کو دیرتک جاگنے والے افراد یہ خبر ضرور پڑھ لیں، ماہرین نے خطرناک انکشاف کر دیا

لاہور ( پرائم نیوز) بین الاقوامی تحقیقی جریدے میں شائع ہونے والی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ نیند میں باقاعدگی اور خلل نہ صرف فالج کی بیماری میں مبتلا کرتا ہے بلکہ فالج کے بعد دوبارہ صحت پہلے کی طرح ہونے میں بھی کافی مشکلات پیش آتی ہیں. دنیا کی طرح پاکستان میں بھی لاکھوں افراد نیند کی کمی کا شکار ہیں اور یہ تحقیق ان کیلئے تشویشناک ضرور ہو سکتی ہے.

جرمن یونیورسٹی کے ماہرین نے نیند میں خلل، فالج کے خطرات اوراسکی بحالی کے درمیان ایک رابطہ قائم کیا ہے. اس مطالعے میں 2 ہزار سے بھی زائد افراد کو شامل کیا گیا ہے جنہیں یا تو اسکمیک اسٹروک، برین ہمریج یا چھوٹا فالج ہوا تھا جس میں فالج کے ہلکے دورے پڑتے ہیں. ہیمریج میں دماغی خون کی نالی پھٹ جاتی ہے جبکہ اسکمیک اسٹروک مریض کو بولنے، چلنے اور ہاتھ ہلانے سے بھی معذور کر سکتا ہے.

ماہرین کا کہنا ہے کہ نیند کے امراض کو 2 بڑی اقسام میں بیان کیا جا سکتا ہے، سلیپ ڈس آرڈرڈ بریدنگ میں نیند کے دوران سانس رکنے کے دورے پڑتے ہیں اور دوسری سلیپ ویک ڈس آرڈر ہے جس میں نیند نہیں آتی اور مریض جاگتا رہتا ہے. ماہرین کا کہنا ہے کہ جن لوگوں کو نیند میں سانس کا مسئلہ تھا ان کی 72 فیصد تعداد اسکیمک اسٹروک کا شکار تھی جبکہ 63 فیصد کو ہیمریج اور 38 فیصد چھوٹے فالج کے شکار ہوئے. ماہرین کے مطابق نیند دماغ کیلئے بہت ضروری ہے اور نیورل سرخت کو تندرست اور باقاعدہ رکھنے میں کافی مددگا ثابت ہوتی ہے.

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں