3

ماؤں کے لعل لا پتہ، آخر کار حکومت بھی ہوش پکڑنے لگی

ماؤں کے لعل لا پتہ، آخر کار حکومت بھی ہوش پکڑنے لگی

لاہور ( پرائم نیوز) بچوں کے اغوااور گمشدگی کے معاملات پر سپریم کورٹ کے حکم پر قائم علی سطحی کمیٹی نے بچوں کے اغوا اور گمشدگی کی اطلاع اور پولیس کے خلاف شکایا ت کے اندراج کیلئے ہیلپ لائن قائم کر دی ہے. اس بات کا اعلان کمیٹی نے چیئرمین ایڈووکیٹ جنرل پنجاب اور دیگر ارکان لاہور ہائیکورٹ بار میں مشترکہ کانفرنس میں کیا. کمیٹی کے رکن اور سپریم کورٹ کے صدر علی ظفر کا کہنا ہے کہ کمیٹی 7 دنوں میں تمام معلومات اکھٹی کر کے رپورٹ تیار کرے گی. کمیٹی کے سربراہ ایڈ ووکیٹ جنرل پنجاب شکیل الرحمن خان نے بتایا ہے کہ پولیس رپورٹ کے مطابق 2011 سے 2016 تک 139 بچے بازیاب نہیں ہو سکے تاہم چند میں سے یہ رپورٹ سامنے آئی ہے کہ یہ بچے اغوا نہیں بلکہ اپنے گھروں سے مرضی سے گئے تھے، سپریم کورٹ بار کے صدر علی ظفر کا کہنا ہے کہ جس طرح چیف جسٹس سندھ کا بیٹا بازیاب کرایا گیا تھا اسی طرح ہر بچہ بازیاب ہونا چاہیئے.

کمیٹی حکومت بچوں کے اغواکی وارداتوں کے تدراک اور قانون سازی کی سفارش بھی کرے گی. سپریم کورٹ بار کے صدر نے کہا ہے کہ تفتیش میں ناقص کارکردگی دکھانے والے پولیس افسران کے خلاف کاروائی کیلئے کمیٹی آئی جی پنجاب کو سفارش کرے گی.

اپنا تبصرہ بھیجیں