9

پاکستان کے بڑے شہرمیں جائیداد کی قیمتوں میں 5 گنا سے زائد اضافہ، عوام انتہائی پریشان

پاکستان کے بڑے شہرمیں جائیداد کی قیمتوں میں 5 گنا سے زائد اضافہ، عوام انتہائی پریشان

کراچی ( پرائم نیوز) وفاقی حکومت نے کراچی میں پراپرٹی کی قیمتوں میں 5 گنا سے بھی زائد اضافہ کر دیا ہے. تفصیلات کے مطابق وفاقی حکومت نے کراچی کو جائیداد کی قیمتوں کیلئے 5 کیٹگریزمیں بانٹ دیا ہے.

اے ون کیٹگری میں کمرشل پلاٹ کی قیمت 21 ہزارروپے فی گز کر دی ہے.کیٹگری ون میں کمرشل پلاٹ کی قیمت 75 ہزاراوررہائشی پلاٹ کی قیمت 20 ہزار روپے گز مقرر کردی گئی ہے.
کیٹگری دو میں کمرشل پلاٹ کی قیمت 60 ہزار، رہائشی پلاٹ کی قیمت 10 ہزار روپے گز مقرر کر دی گئی ہے.
کیٹگری تین میں کمرشل پلاٹ کی قیمت 25 ہزار، رہائشی 6 ہزار فی گز ہوگی.
کیٹگری چار میں کمرشل پلاٹ کی قیمت 40 ہزار، رہائشی 5 ہزار روپے فی گز ہوگی.

کمرشل کیٹگری اے ون میں عبداللہ ہارون روڈ، آئی آئی چند ریگڑ روڈ، شاہراہ فیصل، بمبئے بازار، بوہڑی بازار، جوڑیا بازار، کوئینزروڈ، صرافہ بازار اور زیب النسا سٹریٹ شامل ہیں.

رہائشی اے ون میں کلفٹن، ڈیفنس، گزری، سول لائنز، گارڈن، کے ڈی اے سوسائٹی، سندھی مسلم سوسائٹی اور کمرشل میں بزنس روڈ، بندرروڈ، گارڈن، کے ڈی اے سوسائٹی، سندھی مسلم سوسائٹی اور کمرشل میں بزنس روڈ، بندر روڈ، گارڈن، گلشن اقبال، ڈیفنس، صدر، شاہراہ لیاقت، ایم اے جناح روڈ جمشید کوارٹر شامل ہیں. کمرشل کیٹگری دومیں ملیرکینٹ، ایف بی ایریا، گلشن اقبال، گلستان جوہر، ناظم آباد، نارتھ ناظم آباد، رنچھوڑلائن اور سولجربازار شامل ہیں. ریئل اسٹیسٹ ایجنٹس ایوسی ایشن نے ان قمیتوں کو مسترد کردیا ہے. سٹیٹ ایجنسٹس ایسوسی ایشن کا کہنا ہے کہ حکومت نے جائیداد کی خریدو فروخت پر ٹیکس دوگنے کر دیے ہیں. پراپرٹی ڈیلرز کے مطابق حکومت نے مالدار طبقے کے ساتھ مذاکرات کرکے عام آدمی کیلئے پلاٹ خریدنا ناممکن کر دیا ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں