10

شورٹس پہننے پر چار لڑکوں کو سکول سے باہر نکال دیا، چاروں نے مل کرایسا انوکھا کام کیا کہ جان کرہرکوئی ہنس پڑے

شورٹس پہننے پر چار لڑکوں کو سکول سے باہر نکال دیا، چاروں نے مل کر ایسا انوکھا کام کیا کہ جان کرہرکوئی ہنس پڑے

رواں سال سکول کے 4 لڑکوں نے گرم ترین دن میں گرمی سے بچنے کیلئے شورٹس پہن رکھی تھیں جس کے نتیجے میں انہیں سکول سے باہر نکال دیا گیا. تاہم لڑکوں نے سکول کے اصول و ضوابط کو مدنظر رکھتے ہوئے گرمی سے بچنے کا نیا طریقہ دریافت کر لیا.

درجہ حرارت 33 ہونے کے باعث سکول میں نویں جماعت کے 4 دوستوں نے شارٹس پہن لیے مگر لونگ ہل ہائی برگٹن کی انتظامیہ نے انہیں واپس گھر بھجوا دیا اور ٹراؤزرز پہننے کی تلقین کی.

چاروں دوستوں نے مل کر سکول میں ٹراؤزرز پہننے کی بجائے گرمی سے بچنے کا نیا حل نکال لیا.مارکل پارکر، کوڈی ایلنگ، جارج بوائے لینڈ اور جیسی سٹرنگر نامی چاروں دوستوں نے سکرٹ پہن لیے. سکول کے اساتذہ نے انہیں کافی بار سکرٹ بدلنے کا کہا مگر انہوں نے ایک نہ سنی.

مائیکل کی ماں انجیلا نے کہا ہے کہ شارٹس پہننے پر سکول کی انتظامیہ نے انہیں گھر بھیج دیا لیکن سکول کی لڑکیاں سکرٹ پہنتی ہیں. انجیلا کا کہنا ہے کہ یہ لڑکوں کے خلاف امتیازی سلوک ہے. سکول کے اساتذہ کلاس میں ٹی شرٹس اور شورٹس پہنتے ہیں مگر لڑکوں کو اس کی اجازت نہیں ہے.

سکول کی ہیڈ کیٹ ولیم نے اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ لڑکیوں کو سکرٹ پہننے کی اجازت اس لیے دی گئی ہے کیونکہ یہ یونیفارم کا حصہ ہے. تاہم طلباء سکول کی یونیفارم کا کوئی بھی حصہ پہن سکتے ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں